پاکستان میں ہر سال 10 لاکھ مکانات کی ضرورت ہےایران نے اسرائیل پر ڈرون اور میزائیلوُں سے حملہ کر دیا ہےگوجرانوالہ- سیالکوٹ- وزیر آباد- گجرات اور لالہ موسی، بنا بنا اکنامک زونسیاچن کے محاز پر پاکستان کی فوجپاکستان کے شمالی علاقہ جاتمعاشرے کی سوچ کو بدلنا ریاست کو ماڈرن بنانے سے کہیں زیادہ ضروری ہےمعاشرےمعاشرے کی سوچ کو بدلنا ریاست کو ماڈرن بنانے سے کہیں زیادہ ضروری ہےاگر ہمّت ہو تو معزوری کوئی رکاوٹ نہیں ہوتیمیلہ 6 ستمبروہ لمحہ جب 7.4 شدت کے زلزلے نے تائیوان کو ہلا ڈالامہنگائی کی شرح ۲۰% پر آ گئی-اپنی صحت کا خیال رکھیں- سوشل میڈیا سے دور رہیںصدر ارگان کی پارٹی کو ترکی میں بلدیاتی انتخابات میں شکستافغان سرزمین دہشتگردوں کی محفوظ آماجگاہ ہے ؛ فنانشل ٹائمچولستان میں زمینوں کو آباد کرنے کا منصوبہسائنوٹیک سولر پرائیویٹ لمیٹڈ کی پاکستان میں سرمایہ کاریپیٹرول کی فی لیٹر قیمت میں 9 روپے 66 پیسے کا اضافہ –مائع پیٹرولیم گیس( ایل پی جی) کی فی کلو قیمت میں 6 روپے 45 پیسے کمی کردی گئیبھارت میں پانی کی شدید قلّت؛ موسم گرما میں حالات مزید خراب ھونگےغزہ میں پھنسے دس لاکھ سے زائد لوگ سمندر کا نمکین پانی پینے پر مجبورغزہغزہ میں پھنسے دس لاکھ سے زائد لوگ سمندر کا نمکین پانی پینے پر مجبورامریکی کی ایران کے بیلسٹک میزائل، جوہری اور دفاعی پروگراموں کو سپورٹ کرنے والے پروکیورمنٹ نیٹ ورکس پر نئی پابندیاں عائد کر دی

بھارت میں انسانی حقوق ،مذہبی اور سیاسی جبر کے خلاف امریکی سینیٹ میں قرارداد پیش

واشنگٹن ، نومبر ۲ ( مانیٹرنگ) امریکی سینیٹر ٹامی بالڈون نےامریکی سینٹ میں پیش کی گئی قرار داد میں مطالبہ ہے کہ بھارت میں مذہب کی بنیاد پر امتیازی پالیسیوں کا معاملہ اٹھایا جائے، پُرامن مظاہرین پر تشدد کے خاتمے کے لیے بھارت سے بات کی جائے۔
قرارداد میں کہا گیا ہے کہ مذہبی آزادی بنیادی حق ہے، خلاف ورزی پر امریکا کو کھڑا ہونا اور بولنا چاہیے، منظم مذہبی، سیاسی ظلم و ستم روکنے کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالا جائے سینیٹر ٹامی بالڈون نے کہا ہے کہ بھارت شہریوں کو خطرے میں ڈال رہا ہے، حقِ رائے دہی سے محروم کر رہا ہے، بھارت میں مسلم اور مسیحی آبادی کے خلاف امتیازی پالیسیاں تبدیل کرنے کے لیے کام کیا جائے۔

You might also like